لیبیا میں امریکی فضائی حملے میں القاعدہ کمانڈر ابوموسی اپنے ساتھی سمیت ہلاک

لیبیا میں امریکی فضائی حملے میں القاعدہ کمانڈر ابوموسی اپنے ساتھی سمیت ہلاک

 لیبیا میں امریکا کے فضائی حملے میں شدت پسند تنظیم القاعدہ کے سینیئر کمانڈر موسی ابو داود سمیت ایک جنگجو ہلاک ہو گیا ہے۔امریکی محکمہ دفاع پینٹاگون سے جاری بیان کے مطابق  امریکا نے لیبیا کے علاقے اوباری میں واقع دہشت گردوں کی کمین گاہوں پر فضائی حملہ کیا جس کے نتیجے میں القاعدہ کے سینیئر رہنما موسی ابو داود اپنے ساتھی جنگجو کے ہمراہ مارا گیا ہے۔ موسی ابو داود نوجوانوں کی ذہن سازی کیا کرتا تھا اور انہیں عسکری تربیت فراہم کرنے کا بھی ذمہ دار تھا۔افریقہ میں امریکی کمانڈر نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ لیبیا میں کئی گئی فضائی کارروائی امریکا کا اس سال کیا گیا دوسرا فضائی حملہ تھا جس میں توقع کی مطابق کامیابی ملی جب کہ یہ پہلی کارروائی تھی جس میں القاعدہ جنگجووں کو نشانہ بنایا گیا۔پینٹاگون سے جاری بیان کے مطابق موسی ابو داود نے 2013 میں الجزائر میں فوجی بیرکوں پر حملہ کرکے نو فوجیوں کو ہلاک کردیا تھا اور بیرون ممالک دہشت گردی کے کئی واقعات کی منصوبہ بندی میں بھی ملوث رہا ہے۔ موسی ابوداود دہشت گردی کی کارروائی کے لیے شدت پسند نوجوانوں کی عسکری تربیت بھی کیا کرتا تھا۔واضح رہے کہ 2011 میں ہونے والی بغاوت کے نتیجے میں حکمراں معمر قذافی کی ہلاکت کے بعد سے لیبیا میں نیٹو اور اقوام متحدہ کی حمایت یافتہ نگراں حکومت الوفاق الوطنی امور حکومت انجام دے رہی ہے۔