دُبئی میں بھارتی جوڑے کو قتل کرنے والے پاکستانی کے خوفناک انکشافات

دُبئی میں بھارتی جوڑے کو قتل کرنے والے پاکستانی کے خوفناک انکشافات

 دُبئی کے پوش علاقے عریبین رانچز کے ایک محلے میراڈور کے ایک وِلا میں کچھ ماہ قبل ایک بھارتی جوڑے کو قتل کر دیاگیا تھا۔ جس کے بعد علاقے میں خوف و ہراس پھیل گیا تھا۔خلیجی اخبار گلف نیوز کے مطابق یہ واردات انجام دینے والے پاکستانی نوجوان کو بعد میں پولیس نے جدید ٹیکنالوجی کی مد دسے گرفتار کر لیا تھا۔ملزم کسی مرمت کے کام کے سلسلے میں اس بھارتی جوڑے کے گھر گیا، جہاں اس نے اتفاقاًگھر والوں کے پاس بڑی نقد رقم دیکھی تو اس کی نیت خراب ہو گئی اور اس نے یہاں پر واردات کرنے کا پروگرام بنایا۔ملزم نے اپنے انکشافات میں بتایا کہ اس کا ارادہ صرف ڈکیتی کرنے کا تھا، تاہم اس جوڑے کی جانب سے مزاحمت کی گئی تو اس نے بھارتی بزرگ کو چاقو کے 10 وار کیے جبکہ اس کی بیوی پر 24 بار چاقو چلایا۔اس خونی حملے کی تاب نہ لا کر دونوں میاں بیوی دُنیا سے رخصت ہو گئے تھے۔ اس واردات کے بعد ملزم نے ان کی 18 سالہ بیٹی پر بھی چاقو سے وار کیے مگر وہ خوش قسمتی سے بچ گئی جس نے بعد میں پولیس کو کال کر کے اس ہولناک واردات سے آگاہ کیا۔ پولیس نے ملزم کو صرف 24 گھنٹے کے اندر گرفتار کر لیا تھا۔ اس واردات کے دوران گھر سے زیورات بھی چرائے گئے تھے جوپولیس نے برآمد کر لئے ہیں۔مرنے والے بھارتی خاوند کا نام ہائرن ادھیا بتایا گیا جبکہ اس کی مقتولہ بیوی کا نام وِدھی ادھیا تھا۔ یہ مقتول جوڑا شارجہ کے علاقے میں اپنا کاروبار چلاتا تھا۔ ان کی دو بیٹیاں ہیں جن کی عمریں 13 سال اور 18 سال ہیں۔ اس خاندان کا امارات میں کوئی اور رشتہ دار مقیم نہیں ہے۔علاقہ مکینوں کا کہنا ہے کہ مقتول جوڑا اچھے اخلاق کا مالک تھا، ان کا کبھی کسی سے کوئی جھگڑا یا بدکلامی کا واقعی سُننے دیکھنے میں نہیں آیا۔ اس واقعے نے اہل علاقہ کو سوگوار اور خوفزدہ کر دیا ہے۔ پاکستانی ملزم کو دو کم سن بیٹیوں سے ان کے والدین چھیننے کے جُرم میں سخت سزا سُنائے جانے کا امکان ہے۔