گزشتہ 3ماہ کے دوران 2133یہودیوںنے قبلہ اول کی بے حرمتی کا ارتکاب کیا

گزشتہ 3ماہ کے دوران 2133یہودیوںنے قبلہ اول کی بے حرمتی کا ارتکاب کیا

فلسطین کے مقبوضہ بیت المقدس میں مسجد اقصی میں یہودی آباد کاروں کے دھاوے اور مقدس مقام کی مجرمانہ بے حرمتی کا سلسلہ جاری ہے۔ ایک رپورٹ کے مطابق مارچ کے مہینے میں 2133 یہودی آباد کار مذہبی رسومات کی ادائیگی کی آڑ میں قبلہ اول میں داخل ہوئے اور مقدس مقام کی بے حرمتی کی۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق اسرائیلی فوج  نے مسجد الاقصی میں مارچ میں سیکڑوں یہودی آبادکاروں نے د اسرائیلی پولیس کی فول پروف سیکیورٹی میں نے قبلہ اول کی بے حرمتی کا ارتکاب کیا۔فلسطینی محکمہ اوقاف کی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ گذشتہ دو روز کے دوران6 سو یہودی آباد کاروں نے مسجد اقصی کی کھلے عام بے حرمتی کا ارتکاب کیا۔ مسجد اقصی اور حرم قدسی کی بے حرمتی ایک ایسے وقت میں جاری ہے جب یہودی اپنا سالانہ مذہبی تہوارایسٹر منا رہے ہیں۔عینی شاہدین کے مطابق  یہودی آباد کاروں کی بڑی تعداد مراکشی دروازے کے راستے مسجد اقصی میں داخل ہوئی۔ اس موقع پر اسرائیلی فوج اور پولیس کی بھاری نفری تعینات کی گئی تھی۔ادھر القدس اسٹڈی سینٹر کی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ وقت گذرنے کیساتھ ساتھ یہودی آباد کاروں کے قبلہ اول پر دھاووں میں مسلسل اضافہ ہو رہا ہے۔ حال ہی میں یہودیوں کے مذہبی تہوار ایسٹر پر سیکڑوں یہودی شرپسند قبلہ اول میں داخل ہوئے۔القدس اسٹڈی سینٹر کے سربراہ عماد ابو عواد نے ایک بیان میں کہا کہ سال 2017 میں 30 ہزار یہودیوں نے قبلہ اول کی بے حرمتی کی۔ یہ تعداد 2016 کے تناسب سے 100 فی صد زیادہ ہے۔ 2016 میں 15000یہودی قبلہ اول کی بے حرمتی کے مرتکب ہوئے تھے۔