ترکی نے گولن کے 81حامیوں کو دنیا بھر کے 18ممالک سے گرفتار کر لیا

ترکی نے گولن کے 81حامیوں کو دنیا بھر کے 18ممالک سے گرفتار کر لیا

ترکی میں ناکام فوجی بغاوت کے بعد گولن تحریک کے خلاف شروع کارروائیوں کے حوالے سے نئی تفصیلات سامنے آئی ہیں۔ بتایا گیا ہے کہ ترک خفیہ ادارے نے بیرون ممالک بھی گولن کے حامیوں کو گرفتار کیا ہے۔میڈیارپورٹس کے مطابق ترکی میں جولائی 2016ء کو ہونے والی ناکام فوجی بغاوت کی ذمہ داری ترک مبلغ فتح اللہ گولن پر عائد کرتے ہوئے ترک حکومت نے ابتدائی طور پر ملک بھر میں ان کے حامیوں کے خلاف شروع کی تھی۔ تاہم اب ایک تازہ رپورٹ کے مطابق ترک خفیہ ادارے ایم آئی ٹی گولن تحریک سے منسلک ہونے کے شبے میں دیگر ممالک سے کم از کم اسی افراد کو گرفتار کر کے ترکی لائی ہے۔انقرہ حکومت کے ترجمان بکر بوزداغ کے مطابق ان افراد کو اٹھارہ مختلف ممالک سے گرفتار کر کے ترکی لایا گیا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ایم آئی ٹی کی بیرون ممالک یہ کارروائیاں گولن تحریک کے خلاف ایک بڑی کامیابی ہے۔ تاہم اس موقع پر ترجمان نے یہ نہیں بتایا کہ یہ آپریشن کس طرح اور کہاں کہاں کیا گیا۔صحافیوں کی جانب سے پوچھے جانے والے ایک سوال کے جواب میں ترک صدر رجب طیب ایردوآن کے ترجمان ابراہیم کالن نے کہاکہ ترکی کسی غیر قانونی کارروائی میں ملوث نہیں ہوا ہے۔ اس موقع پر انہوں نے واضح کیا کہ کوسووو میں آپریشن مقامی حکام کے تعاون سے کیا گیا تھا۔