کرونا کے خلاف دوا کب تیار ہوگی؟ ڈبلیو ایچ او کا بڑا انکشاف

کرونا کے خلاف دوا کب تیار ہوگی؟ ڈبلیو ایچ او کا بڑا انکشاف

واشنگٹن : عالمی ادارہ صحت نے کرونا وائرس کی دوا سے متعلق کہا ہے کہ کوویڈ 19 کی وجہ سے سانس کی بیماری میں نصف ملین سے زیادہ افراد ہلاک ہوچکے ہیں۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق عالمی ادارہ صحت نے کورونا بحران کے ابتدائی مراحل کی اطلاعات ملنے سے متعلق تازہ ترین معلومات جاری کردیں، عالمی ادارہ صحت نے مہلک ترین وبا کرونا وائرس کی دوا سے متعلق کہا ہے کہ کورونا وائرس سے بچاؤکی دوا تیار کرنےکی کوششیں جاری ہیں۔

ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن کا کہنا تھا کہ کچھ دوا کا ٹرائل کیا جا رہا ہے، جس کا نتیجہ آنے میں دو ہفتے لگیں گے، جس کےلیے دوا کے ٹرائل کے لئے انتالیس ممالک سے ساڑھے پانچ ہزارسے زائد رضاکاروں کو بھرتی کیا گیا ہے۔

ڈبلیو ایچ او کےڈائریکٹر جنرل کا کہنا ہے کہ یہ پیش گوئی نہیں کی جاسکتی کہ کب تک کووڈ نائنٹین کے خلاف کوئی دوا تیار ہو جائے گی۔

انہوں نے انکشاف کیا کہ کرونا وائرس کی وجہ سے سانس کی بیماری میں نصف ملین سے زیادہ افراد ہلاک ہوچکے ہیں۔

عالمی ادارہ صحت کا کہنا ہے کہ ادارے کو ووہان میں نمونیا کے پہلے کیسوں کے متعلق چین نے نہیں بلکہ چین میں موجود ڈبلیو ایچ او کے دفتر نے الرٹ کیا۔

عالمی ادارہ صحت کا کہنا تھا کہ 31 دسمبر کو چین میں ڈبلیو ایچ او کے دفتر نے وائرل نمونیہ کے مریضوں سے متعلق مطلع کیا تھا، جس کے بعد پوچھنے پر چین نے تین جنوری کو معلومات فراہم کیں۔