چین نے یو این آرم ٹریٹیپر دستخط کر دیے

چین نے یو این آرم ٹریٹیپر دستخط کر دیے

چین نے بین الاقوامی معاہدے ''یو این آرم ٹریٹی''پر دستخط کر دیے۔اقوام متحدہ کے اس عالمی معاہدے جس کا مقصد دنیا کے متنازعہ علاقوں میں اسلحے کی سپلائی پر قابو پانا ہے، کی توثیق کی منظوری چین کی حکمران کمیونسٹ پارٹی نے جون میں اپنے اجلاس کے دوران دی تھی۔ اقوام متحدہ میں چین کے مستقل مندوب زاہنگ جون نے اپنے اعلان میں کہا کہ بین الاقوامی معاہدہ پر دستخط بنی نوح انسان کے مشترکہ مستقبل کے لیے عالمی سطح پر اسلحے کی سپلائی پر قابو پانے کی کثیر الجہتی کوششوں میں چین کے کردار اور اخلاص کو ظاہر کرتا ہے۔انہوں نے کہا کہ چین غیر ریاستی عناصر کو اسلحہ نہ دینے اور صرف خود مختار ریاستوں کو اسلحہ کی ترسیل کی اجازت دیتا ہے۔بین الاقوامی سطح پر رکن ممالک کی جانب سے ہتھیاروں کی فروخت اور ترسیل کا ریکارڈ رکھنے اور سرحدوں کے پار اسحلے کے زور پر انسانی حقوق کی خلاف ورزیاں روکنے کے غرض سے طے پائے جانے والے اس عالمی معاہدہ کی منظوری اقوام متحدہ نی2013 میں دی تھی جس کی توثیق کے لیے امریکہ متعدد بار انکار کر چکا ہے۔اس معاہدے کی اب تک دنیا کے 107ممالک توثیق کر چکے ہیں۔چین نے 22 جون کو اس معاہدے کی توثیق کرنے کے فیصلے کا اعلان کیا تھا۔یاد رہے کہ امریکہ کے سابق صدر اوباما نے اس معاہدے کی توثیق کے لیے دستخط کر دیے تھے تاہم امریکی ایوان بالا سینیٹ نے اسے مسترد کر دیا تھا جبکہ صدر ٹرمپ نے اس معاہدے کی صدارتی توثیق کو ایک حکم نامے کے تحت یکسر ختم کر دیا۔