کیا اب ٹک ٹاک پر پابندی عائد ہونے جارہی ہے؟

کیا اب ٹک ٹاک پر پابندی عائد ہونے جارہی ہے؟

واشنگٹن: امریکی وزیرخارجہ مائیک پومپیو نے کہا ہے کہ امریکا ٹک ٹاک سمیت دیگر چینی سوشل ایپلیکیشنز پر پابندی عائد کرنے سے متعلق غور کررہا ہے۔

غیرملکی خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق بھارت کے بعد اب امریکا اپنے ملک میں چینی ایپ ٹک ٹاک سمیت دیگر ایپلیکیشنز پر پابندی عائد کرنے کا سوچ رہا ہے تاہم اب تک حتمی فیصلہ نہیں کیا گیا۔

رپورٹ کے مطابق امریکی میڈیا چینل ’فوکس نیوز‘ سے گفتگو کرتے ہوئے امریکی وزیرخارجہ مائیک پومپیو نے کہا ہے کہ سیکیورٹی خدشات اور قومی مفاد کے پیش نظر چینی ایپس پر پابندی کا سوچ رہے ہی 

انہوں نے دعویٰ کیا کہ ٹرمپ اور مجھے خدشہ ہے کہ ان ایپس کے ذریعے امریکی شہریوں کا موبائل ڈیٹا اور اہم معلومات چین حاصل کررہا ہے جو ایک سنجیدہ معاملہ ہے جس پر ٹرمپ انتظامیہ غور کررہی ہے۔ 

پومپیو کا مزید کہنا تھا کہ اگر امریکی صارفین کو کوئی مسئلہ نہیں اور وہ چاہتے ہیں کہ ان کی ذاتی نوعیت کی معمولات بیجنگ حکام تک پہنچیں تو وہ ٹک ٹاک سمیت دیگر ایپلیکیشنز استعمال کرتے رہیں۔ 

یاد رہے کہ 30 جون کو بھارت نے چین کے ساتھ لداخ کے مقام پر ہونے والی جھڑپ کے بعد ٹک ٹاک سمیت 59 ایپلیکشنز پر پابندی عائد کرچکا ہے۔ جو اب تک کا سب سے بڑا اقدام قرار دیا جارہا ہے۔