”  بریکنگ: فورڈ حکومت نے صوبہ بھر میں اسٹے ایٹ ہوم آرڈر میں 2 جون تک توسیع کردی ہے“۔

” بریکنگ: فورڈ حکومت نے صوبہ بھر میں اسٹے ایٹ ہوم آرڈر میں 2 جون تک توسیع کردی ہے“۔

پریمیئر ڈگ فورڈ نے کہا کہ ان کی حکومت  اس موسم گرما میں تمام اونٹارینز کی حفاظت کے لئے صوبہ بھر میں اسٹے ایٹ ہوم کے آرڈر میں 2 جون تک توسیع کر رہی ہے۔ فورڈ نے جمعرات کی سہ پہر کوٸنز پارک میں نیوز کانفرنس میں دو ہفتے کے لیۓٍ اسٹے ایٹ ہوم آرڈر کی توسیع کی تصدیق کردی۔ "صورتحال آہستہ آہستہ ایک بہتر سمت کی طرف جارہی ہے۔ ہم ابھی خطرے سے باہر نہیں ہیں۔ ہمارے اسپتال ابھی بھی کام  کے بہت زیادہ دباؤ میں ہیں ،کورونا کی مختلف حالتیں ایک تشویش کا باعث بنی ہوئی ہیں۔ لہٰذا ہمیں چوکنا رہنا چاہئے ،" فورڈ کہا۔ "ہمیں لازماً وہی کرتے رہنا چاہئے، جو ہم کررہے ہیں۔ 
         اسٹے ایٹ ہوم آرڈر سب سے پہلے 8 اپریل کو نافذ کیا گیا تھا اور اب صوبے میں کووڈ-19 کے زیادہ پھیلنے کی وجہ سے دو بار توسیع کی گئی ہے۔ لاک ڈاؤن کے دوران بیرونی سہولیات کو دوبارہ کھولنے کے مطالبوں کے باوجود ، ظاہر ہوتا ہے کہ فورڈ حکومت کم سے کم اگلے مہینے تک ان کو بند رکھنے کا ارادہ رکھتی ہے۔ صوباٸ حکومت نے کہا کہ وہ 2 جون کو ٹینس اور باسکٹ بال کورٹس اور کھیل کے میدانوں سمیت بیرونی سہولیات کو دوبارہ کھولنے پر غور کرے گی۔ فورڈ نے کہا کہ آپ جانتے ہیں ، آئی سی یوز میں ابھی بھی بہت مریض ہیں۔ میرے خیال میں کل کی تعداد 805 تھی ، اور یہ اچھی علامت نہیں ہے ، ”فورڈ نے کہا۔
                 محکمہ صحت کے عہدے داروں کا کہنا ہے کہ پابندیاں تبھی ختم ہوں گی جب نئے کیسز اور اسپتالوں میں داخل ہونے والوں کی تعداد میں بہت بڑی کمی آۓ۔ صوبائی محکمہ صحت کے عہدےداروں نے آج  2759 نئے کیس رجسٹر کیۓ اور نئے کیسوں کی سات روزہ اوسط تعداد 2،729 ہے۔ " ہم مئی کے آخر تک 18 سال سے زیادہ عمر کے 65 فیصد اونٹارینز کی ویکسینیشن کرلیں گے“۔
                     اس صوبے کے چیف میڈیکل آفیسر آف ہیلتھ ڈاکٹر ڈیوڈ ولیمز نے کہا کہ اسٹے ایٹ ہوم حکم تب ہی ختم کیا جاۓ جب اونٹاریو میں روزانہ کووڈ-19 کے کیسز کو ایک ہزار سے کم ہوں۔  " ہم یہ دیکھنا چاہتے ہیں کہ ہماری آبادی پر  ویکسینیشن کا کیا اثر پڑتا ہے۔  " مئی کے آخر میں 12 سے 17 سال کے بچوں کی بھی ویکسینیشن کی جاۓ گی۔ فورڈ نے بھی جمعرات کو اس بات کی تصدیق کی ہے کہ مئی کے آخری ہفتے کے دوران ، 12 سے 17 سال کی عمر کے بچے فائزر ویکسین کی اپنی پہلی خوراک کے لیۓ رجسٹریشن کروانے کے اہل ہوں گے یہ  واحد ویکسین ہے جو فی الحال اس عمر کے لوگوں پہ استعمال ہوگی۔