” ہمیں ان گرمیوں میں اونٹاریو کے لوگوں کے لئے ویکسین کی دو خوراکیں درکار ہیں، پریمیٸر ڈگ فورڈ۔“

” ہمیں ان گرمیوں میں اونٹاریو کے لوگوں کے لئے ویکسین کی دو خوراکیں درکار ہیں، پریمیٸر ڈگ فورڈ۔“

پریمیٸر ڈگ فورڈ نے جمعرات کو کہا کہ وہ اونٹارینز کے لیۓ اس موسم گرما میں دو مرتبہ ویکسینیشن چاہتے ہیں اور یہ کہ  فائزر اور موڈرنا ویکسین کی زیادہ ترسیل سے انھیں بہت خوشی ہے۔ اونٹاریو اپنی ویکسی نیشن مہم میں تین ہفتوں کے بجائے چار ماہ کے وقفے کے بعد سب کو ویکسین کی دوسری خوراک دے رہا ہے۔ اونٹاریو کی وزیر صحت کرسٹین ایلیٹ نے جمعرات کو کہا کہ اونٹاریو مئی کے آخر تک 65 فیصد تمام اہل بالغوں کو پہلی خوراک فراہم کرے گا۔  وفاقی عہدےداروں نے اس بات کی تصدیق کی ہے کہ ویکسینیشن کے تمام اہل کینیڈین  ایک خوراک وصول کرسکیں گے۔ جون. تاہم ، فورڈ نے جمعرات کو ایک نیوز کانفرنس میں وفاقی حکومت سے یہ ضرور کہا کہ " صرف ایک خوراک کورونا سے بچاٶ کے لیۓ  کافی نہیں ہے۔" انہوں نے کہا ، "اگر ہمیں وافر سپلائی مل جاتی ہے تو ہم ایک کی بجائے دو خوراک دیں گے ،" انھوں نے اپنے وفاقی ہم منصبوں پر سرحدوں پر پابندیاں سخت کرنے اور ویکسینیشن کے لئے مزید اقدامات نہ کرنے پر شدید تنقید کی۔ وفاقی محکمہ صحت کے اہل کاروں نے یہ نہیں بتایا کہ اس موسم گرما میں ملک میں ویکسین کی کتنی خوراکیں دیۓ جانے کی امید ہے۔             
                      عہدےداروں نے یہ بھی کہا کہ وہ فی الحال انفرادی طور پہ مشورے دینے کا ارادہ نہیں رکھتے ہیں کہ ایک یا دو خوراک کے بعد کوئی شخص کیا کرسکتا ہے۔ ریاست ہائے متحدہ مریکہ دوا کمپنیوں کے ساتھ قریبی تعلقات کے ذریعہ دوسرے ممالک سے کہیں زیادہ ویکسین کی فراہمی حاصل کرنے میں کامیاب رہا ہے اور اس ملک نے اپنے شہریوں کے لئے تین ہفتوں کے وقفے کے بعد دوبارہ ویکسینیشن  کے منصوبے پر عمل کیا ہے۔ اس ہفتے بیماریوں پر قابو پانے اور ان کی روک تھام کے امریکی مراکز نے تازہ ترین رہنمائی فراہم کی جس میں کہا گیا ہے کہ جن لوگوں کی مکمل طور پر ویکسینیشن کی گئ ہے۔  انہیں گھر کے اندر ماسک استعمال کرنے کی ضرورت نہیں ہے۔